History of پورن گرافی Porngraphy

Porngraphy کی تاریخ

Porngraphy حاضر دور کی سب سے زیادہ منہوس زہر ہے یہ وہ زہر ہے جس کا کوئی بھی علاج آج تک دریافت نہ ہوسکااکثر ہمارے ذ ہن میں یہ بات آتی ہوگی کہ آخر یہ Porngraphy شروع کب ہوئی اور اس کو اتنا فروغ کیوں کیا جاتا ہے اور اس کا تاریخی پس منظر کیا ہے آج ہم اس کی تاریخ جاننے کی کوشیش کریں گے ۔

تاریخ میں Porngraphy سب سے پہلے سلطان صلاح الدین ایوبی کے دور میں شروع کی گئی اور اس ناپاک چیز کو سب سے پہلے صلیبی بادشاہوں نے بہ طور ہتھیار مسلمانوں کے لیئے استعمال کیا صلیبی ہر میدان میں مسلمانوں سے شکست سے کافی پریشان تھے اسلامی افواج ہر میدان میں صلیبی کے لیئے بھاری ثابت ہوتی تھیں صلیبیوں نے مسلم اور صلیبی افواج کا موازانہ کرنے لیئے ایک اجلاس منقعد کیا جس میں مسلمان افواج کی طاقت کا راز جاننے کی کوشیش کی گئی جس سے وہ جان پائے کے مسلمان رات بھر راب کی عبادت میں مشغول رہتے ہیں اور دن میں جنگ کے میدان میں اپنے جوہر دکھاتے ہیں جبکہ اس کے برعکس صلیبی افواج رات بھر زنا اور شراب کی محفلوں میں مشغول رہتے ہیں ۔

صلیبی کے اس اجلاس میں ایک ذہین شخص نے صلیبی اور مسلمان افواج کے نفسیات بیان کرتے ہوئے اور صلیبی افواج کی ہر بار ہار کا زمہ دار صلیبی میں پائی جانے والی زنااور سیکس کی عادت بتائی اور جس چیز کا وجود مسلمانوں میں نہ تھا چونچہ اس عمل کو مسلمان افواج تک پہچانے کے لیئے ہر اقدام اٹھائے گئے اور Art Porngraphy کا منصوبہ طے پایا گیا اس منصوبہ کے بعد سلطان صلاح الدین ایوبی کو کچھ دنوں کے بعد یہ اطلا ع ملی کے مسلمان افواج رات کو غائب پائے جاتے ہیں اور مسلمانوں میں جنسی گفتگوں بھی سنی جارہی ہے سلطان صلاح الدین ایوبی نے جب اس معملا کا پتہ لگایا تو پتاچلا کے جنسی سیکس کے بارے میں ایک عجائب خانہ بنایا گیا ہے جہاں فحش قسم کی تصاویر بنائی گئی ہیں اور جس میں مسلمان افواج بھی جارہے ہیں۔

سلطان صلاح الدین ایوبی نے اس منصوبے کو رکھنے کے لیئے ہر کوشیش کی لیکن اس زہر کو پوری طرح ختم نہ کر سکیں اور بیت المقدس کو فتح کرنے کے بعد وہ انتقال کر گئے ۱۸ صدی میں Porngraphy میں نئے انداز میں کام شروع ہوا اوردرخت کی لکڑیوں کو تراش کر فحش تصاویربنائی گئی۱۸۳۹ میں جب کیمرہ ایجاد ہواتو یہ بہت جلد Porngraphy کا ہتھیار بن گیا تقریبا ۱۸۵۵ میں اسے پہلی بار Porngraphy کے استعمال کیا گیا اسی طرح ۱۸۷۶ میں وڈیوکیمرہ ایجاد ہونے کے بعد اس کو بھی اس کام میں صرف کیا گیا پہلی پورن فلم ۱۸۹۵ میں فرانس میں ریلیز ہوئی اور یہ فلم تقریبا ۱۶ منٹ کی تھی اس کے بعد سیکس کی خواہش ضرورت سے بڑھ کر جنون میں بدل گئی اس طرح یہ زہرپورے یورپ میں پھل گیا اور وقت گزرنے کے ساتھ۱۹ صدی میں اس زہرکو مزید بہتر کیا گیا اور یہ زہر پھلتے پھلتے کئی ممالک کو لپیٹے میں لے لیا اور اب اس جدید دور میں اس فحش فلم کے انٹر نٹ پے کئی ویب سائیٹس موجود ہیں اور ایک سروے کے مطابق پورن انڈسٹر ی کو سب سے زیادہ ٹریفک ایشیاء سے ملتی ہے ۔

Reality of Taj Mahal and Mughal Empire

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Pin It on Pinterest